شدید گرمی اور کڑکتی دھوپ؛ شہریوں نے ٹوپیاں، عینکیں، رومال، تولیہ اور چھتری کا استعمال شروع کر دیا

جہلم: شہر اور گردونواح میں گرمی کی شدت اور کڑکتی دھوپ سے بچاؤکے لئے شہریوں نے ٹوپیاں، عینکیں، رومال، تولیہ اور چھتری کا استعمال شروع کر دیا، چشمے، ٹوپیاں اور رومال فروخت کرنے والے محنت کش اپنے بچوں کی روزی روٹی کمانے کے لئے شہر کی سڑکوں، چوک چوراہوں کے اطراف چھوٹی چھوٹی دکانیں سجائے نظر آتے ہیں۔

اندرون شہر سمیت جی ٹی روڈ کے مختلف مقامات پر ٹوپیاں عینکیں، رومال، چھتریاں وغیرہ سجا کر محنت کشوں نے کارروبار شروع کر رکھاہے جہاں مرد و خواتین اپنی پسند کی خریداری کرتے نظر آتے ہیں۔

دھوپ اور گرمی سے بچاؤ کیلئے چشمے ،ٹوپیوں اور مختلف ڈیزائنوں کے رومالوں کے استعمال میں اچانک تیزی آ گئی ہے۔ شہریوں کے رجحان کے پیش نظر روزگار کمانے والے محنت کشوں نے شہر کے بازاروں سمیت مین بازار، نیا بازار، ٹرنک بازار، چوک گنبد والی مسجد، شاندار چوک، محمدی چوک، جادہ چوک، ٹاہلیانوالہ، بلال ٹاؤن، سول لائن روڈ، مشین محلہ روڈ ، ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال چوک، جی پی او چوک سمیت روہتاس روڈ، جادہ چوک، جی ٹی روڈ پر چشمہ ،ٹوپیاں، رومال، اور چھتریوںکی مختلف اقسام کی مچھر دانیوں سمیت دیگر گرمی سے بچاؤ کی اشیاء فروخت کرنے والوں نے عارضی دکانیں قائم کر رکھی ہیں۔

ان مقامات پر شہریوں کا ہجوم خریداری کرتا نظر آتا ہے۔ بعض موبائل دکاندار گھوم پھر کر چشمے ، ٹوپیاں اور رومال فروخت کرتے دکھائی دیتے ہیں، 100 روپے سے زائد کے چشمے، پی کیپس اور رومال بھی فروخت کئے جا رہے ہیں، مہنگائی کے باعث غریب شہری سستے داموں میں ہی پسندیدہ چائینیزاشیاء خرید کر گرمی اور دھوپ سے اپنا دفاع کر نے کو ترجیح دے رہے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button