جہلم میں ٹرانسپورٹرز کی لوٹ ماری جاری، مسافر رل گئے، لڑائی جھگڑے روزانہ کا معمول

جہلم: ضلعی انتظامیہ خاموش تماشائی مسافر رل گئے، لڑائی جھگڑے روزانہ کا معمول، رکشہ ڈرائیوروں نے بھی کرایوں میں خود ساختہ اضافہ کر دیا، سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی ائیر کنڈیشن کمرے تک محدود، ٹرانسپورٹرز کی مسافروں سے لوٹ مار جاری۔ مسافروں نے ڈپٹی کمشنر، چیئرمین ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی سے نوٹس لینے کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق شہر اور دوسرے اضلاع میں چلنے والی ٹرانسپورٹ کے ٹرانسپورٹرز نے رواں ماہ از خود کرایوں میں اضافہ کرکے لوٹ مار کا بازار گرم کررکھا ہے جبکہ سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی اس حوالے سے خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہے ہیں۔

مسافروں کا کہنا ہے کہ پچھلے 2 ماہ سے پٹرولیم مصنوعات میں کسی قسم کا اضافہ نہیں کیا گیا، اس کے باوجود ٹرانسپورز سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی سرپرستی میں لوٹ مار جاری رکھے ہوئے ہیں ، جبکہ پنجاب روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی طرف سے کرایوں میں اضافے کا کوئی نوٹیفکیشن جاری نہیں ہوااور نہ ہی سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے باضابطہ طور پر کوئی نوٹیفیکیشن جاری کیا ہے۔

سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی عدم توجہی کی وجہ سے ٹرانسپورٹرز سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے اختیارات استعمال کرکے از خود کرایوں میں اضافہ کرکے مسافروں کی جیبوں کا صفایا کرنے میں مصروف ہیں۔

مسافروں نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جنرل بس اسٹینڈ سے مضافاتی علاقوں اور دوسرے اضلاع میں چلنے والی ٹرانسپورٹ سمیت رکشہ ڈرائیوروں نے بھی سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی عدم دلچسپی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سٹاپ ٹو سٹاپ کرائے میں غیر معمولی اضافہ کر دیاہے ۔

شہری، سماجی، رفاعی، فلاحی، مذہبی، کارروباری تنظیموں کے عمائدین نے ڈپٹی کمشنر، چیئرمین ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی سے نوٹس لینے اور اضافی کرائے وصول کرنے والے رکشہ ڈرائیوروں اور ٹرانسپورڑز کے خلاف مقدمات درج کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button