جہلم کے تھانوں میں پولیس نفری کم ہونے سے ملازمین 24 گھنٹے ڈیوٹی سرانجام دینے پر مجبور

جہلم: امن و امان کے حوالے سے پولیس کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل تصور کیا جاتا ہے، جہلم شہر سمیت ضلع بھر میں بڑھتے ہوئے جرائم کی وارداتوں کو کنٹرول کرنے کیلئے پولیس دن رات تگ و دو کر رہی ہے۔

پولیس نفری کم ہونے کی وجہ سے پولیس ملازمین 24/7 گھنٹے ڈیوٹیاں سرانجام دینے پر مجبور ہیں ، 18 لاکھ سے زائد آبادی والے ضلع میں صرف 1 ہزار پولیس ملازمین تعینات ہیں، دوسری جانب ضلع جہلم کی چاروں تحصیلوں میں صرف 3 ڈی ایس پی خدمات سرانجام دے رہے ہیں جبکہ ڈی ایس پی سٹی ، ڈی ایس پی ٹریفک، ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹر ، ڈی ایس پی لیگل اور ڈی ایس پی سپیشل برانچ کی سیٹیں خالی پڑیں ہیں۔

اسی طرح تھانوں میں ایس ایچ اوانسپکٹرز کی بات کریں تو 11 تھانوں میں سے صرف 4 تھانوں میں انسپکٹرزتعینات ہیں جبکہ 7 تھانوں میں سب انسپکٹر، انسپکٹرز کی ذمہ داریاں سرانجام دے رہے ہیں ، اسی طرح سب انسپکٹرز کی کمی کی وجہ سے ہر تھانے میں 1،1 سب انسپکٹر تعینات ہے جبکہ ہر تھانے میں کم از کم 4/5 سب انسپکٹرز تعینات ہونے چاہیں۔

شہر کی سماجی، رفاعی، فلاحی، کارروباری تنظیموں کے عمائدین نے منتخب ممبران قومی و صوبائی اسمبلیوں سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع جہلم میں آبادی کے تناسب کے لحاظ سے پولیس نفری میںاضافہ کروایا جائے تاکہ جرائم کی شرح میں کمی واقع ہو سکے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button