جہلم کے گلی محلوں اور چوک چوراہوں میں قائم سنوکر اور بلیئرڈ کلب منشیات اور جوئے کے اڈوں میں تبدیل

جہلم: قانون نافذ کرنے والے اداروں و ضلعی انتظامیہ کی عدم دلچسپی اور ڈنگ ٹپاؤ پالیسی کے باعث شہر کے گلی محلوں اور چوک چوراہوں میں قائم سنوکر اور بلیئرڈکلب منشیات اور جوئے کے اڈوں میں تبدیل ، سنوکر کلبوں میں نوجوان نسل سرعام شراب اور جواء کھیلنے میں مصروف ہیں۔

سنوکر و بلیئرڈ کلب صبح سے لیکر رات گئے تک جرائم کی نرسیاں کھلی رہتی ہیں جہاں نوجوانوں کو بے راہ روی کا شکار بنایا جارہاہے ۔ بیشتر طالبعلم سکولز، کالجز اور اکیڈمیز جانے کی بجائے ان کلبوں میں اپنا قیمتی وقت ضائع کرنے میں مشغول دکھائی دیتے ہیں ۔جہاںوہ جرائم پیشہ افراد کے ہتھے چڑھ کر جرائم وکرائم کی دلدل میں پھنس رہے ہیں۔

علاوہ ازیں ان کلبوں میں رات گئے تک مختلف کھیل کھیلنے والے نوجوان گھروں میں جانے کی بجائے سٹریٹ کرائم چوری و ڈکیتی کی وارداتوں میں دلچسپی لے رہے ہیں۔ ان کلبوں میں آوارہ و نشئی نوجوانوں کی اخلاق باختہ گفتگو،گالی گلوچ اور لڑائی جھگڑوں کی وجہ سے علاقہ مکینوں سمیت مسجدوں میں جانے والے نمازیوں خصوصاً گلی محلوں سے گزر نے والی خواتین و دیگر شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے مقامی پولیس سب کچھ جاننے کے باوجود خاموش تماشائی کا کردارادا کر رہی ہے۔

عوامی سماجی ،شہری و مذہبی حلقوں نے ڈی پی اوسے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button