ایک ادارہ دو قانون نامنظور، محکمہ ڈاک کے ملازمین پھٹ پڑے

جہلم: ایک ادارہ 2 قانون نامنظور، محکمہ ڈاک کے ملازمین پھٹ پڑے، محکمے کے آپریشنل ملازمین کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیوں ،سب سے زیادہ کام کرنے والے ملازمین کو سب سے کم مراعات دی جاتی ہیں۔

پاکستان پوسٹ نے ہفتے کے روز یونین کے مطالبے اور احتجاج کے باوجود ڈاکخانے بدستور کھولنے کا فیصلہ کیا، پوسٹل ہیڈ کوارٹر سے جاری سرکلر کے مطابق جہلم سمیت ملک بھر کے تمام ڈاکخانوں کے کاؤنٹر پیر سے ہفتہ صبح 9 بجے سے شام 4 بجے تک کھلے رہیں گے اور چھٹی 5 بجے ہوگی جبکہ جمعہ کے روز کاؤنٹر دن 12 بجے بند اور چھٹی دن ساڑھے 12 بجے ہوگی ، سرکلر کے مطابق شبانہ ڈاکخانے ہفتے میں6 روز دن 3 بجے سے رات 9 بجے تک خدمات سر انجام دیں گے۔

ادھر اس فیصلے کے خلاف جہلم جی پی او سمیت ملک بھر کے ملازمین کے احتجاج کی اطلاعات ملی ہیں ، نوپ یونین سی بے اے کے قائدین اور دیگر رہنماؤں نے حکومتی احکامات کے باوجود ہفتے کو ڈاکخانے کھولنے کے فیصلے پر گہری تشویش اور تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اسے بلا جواز اور غیر منطقی قرار دیا۔

انہوں نے موقف ظاہر کیا ہے کہ ہفتے کے روز تمام دفاتر اور بنک بند ہوتے ہیں اور کسٹمرز کی بہت کم تعداد عام دنوں کے مقابلے میں پوسٹل سروسز سے استفادہ حاصل کرتی ہے ، دفاتر وغیرہ بند ہونے سے ڈاک بہت کم تقسیم ہوتی ہے ، اس روز 16 ہزار ڈاک خانے کھولنے کا عمل بجلی اور فیول کی بچت کی پالیسی پر پانی پھیردے گا، فیصلے کو واپس نہ لیا گیا تو احتجاج کی کال دی جائے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button