عیدالفطر کے تیسرے دن بھی سرکاری تفریح پارک میں سناٹا چھایا رہا

جہلم: عیدالفطر کے تیسرے دن بھی سرکاری تفریح پارک میں سناٹا چھایارہا، ضلع جہلم کے اکلوتے سرکاری پارک کو انتظامیہ نے تالے لگا کر شہریوں سے مفت تفریح کی سہولت بھی چھین لی ، شہری سراپا احتجاج ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ضلع جہلم کے واحد سرکاری پارک پر انتظامیہ نے گزشتہ برس کورونا وائرس کیوجہ سے پابندیاں کیں اور پارک سے ملحقہ گیٹ کو تالے لگاکر شہریوں کی آمدورفت پر پابندی عائد کر دی، گزشہ کئی ماہ سے حکومت نے کورونا پابندیاں ختم کر دی ہیں لیکن انتظامیہ نے اس کے باوجود پارک سے ملحقہ گیٹ پر لگایا جانے والا تالا کھلوانے تاحال ضرورت محسوس نہیں کی۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ پارکس سے ملحقہ آبادیاں جن میں پروفیسر کالونی ، گلزاری کالونی ، سول لائن روڈ سمیت دیگر آبادیوں کے مکین ضلع کچہری میں پنجگانہ نماز ادا کرتے تھے جبکہ ماہ رمضان کے مقدس مہینے میں نماز تروایح نماز عید بھی ضلع کچہری جامع مسجد میں ادا کرنے کو ترجیح دیتے، انتظامیہ نے نامعلوم وجوہات کی بناء پر پارک سے ملحقہ گیٹ کو تالا لگا کر شہریوں سے تفریح سمیت نماز کی سہولت بھی چھین لی ہے۔

گزشتہ روز شہر کے مختلف علاقوں سے آنے والے شہریوں نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ سرکاری پارک میں کسی قسم کا ٹکٹ یا پارکنگ فیس وصول نہیں کی جاتی جس کیوجہ سے اپنے بچوں کو جھولے وغیرہ دیکر مطمئن کر لیتے تھے ، پہلی بار ضلعی انتظامیہ نے غریب ، متوسط طبقے سے تفریح کی سہولتیں بھی واپس چھین لی ہیں۔

شہریوں اور ننھے معصوم بچوں نے وزیراعلیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب، سیکرٹری بلدیات سے مطالبہ کیاہے کہ سرکاری پارک میں ٹوٹے ہوئے جھولوں کو مرمت کروایا جائے ،سٹریٹ لائٹس کی بھی درستگی کروائی جائے اور شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کی غرض سے سی سی ٹی وی کیمرے نصب کروا کر پارک سے ملحقہ گیٹ کو کھولا جائے تاکہ غریب ، سفید پوش طبقہ سے تعلق رکھنے والے افراد اپنے بچوں کو مفت تفریح سہولیات مہیا کر سکیں ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button