اشرافیہ اپنی عیاشیوں پر ایمرجنسی نافذ کر لے تو پاکستان کو آئی ایم ایف کی طرف جانا ہی نہ پڑے۔ صفدر حسین سیٹھی

جہلم: اشرافیہ مختلف اشیاء کی درآمد پر پابندی لگانے کی بجائے اگر اپنی عیاشیوں پر ایمرجنسی نافذ کر لے تو پاکستان کو آئی ایم ایف سمیت دیگر اداروں کی طرف پاکستان کو جانا ہی نہ پڑے۔

ان خیالات کا اظہار شہر کی معروف سماجی و کارروباری شخصیت صفدر حسین سیٹھی نے جہلم پریس کلب کے نمائندہ وفد سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے جس طرح ہمارے ملک میں اشرافیہ عیاشی کرتی ہے اگر یہ پیسہ بچا کر عوامی فلاحی منصوبوں پر خرچ کیا جائے تو اس کے بہتر نتائج سامنے آسکتے ہیں ، اگر ایسا نہ کیا گیا تو سری لنکا اور ایران میں مہنگائی کے خلاف جو کچھ ہو رہاہے ، خدانہ کرے کہ ہمارے ملک میں ایسا ہو۔

انہوں نے کہا کہ عیاشیاں کسی بھی ملک کی تباہی کا موجب بنتی ہیں، اسلام بھی فضول خرچی سے منع کرتا ہے پاکستان میں ایک 20 ویں گریڈ کے آفیسر نے بھی کہیں جانا ہو تو اس کے پروٹوکول پر ہزاروں لاکھوں روپے خرچ کر دیئے جاتے ہیں ، یہی ملکوں کی تباہی کا موجب بنتا ہے جس طرح سرکاری خزانے سے جلسوں، ریلیوں اور پروٹوکول پر اخراجات اٹھ رہے ہیں وہ بھی غریب کے پلے سے جائینگے، ہمیں ان عیاشیوں سے اجتناب کرنا ہوگا، وگرنہ احتساب کا کوڑا ہمیں کسی بھی وقت پڑ سکتا ہے۔

صفدر حسین سیٹھی نے کہا کہ یہ وقت سوچ سمجھ کر فیصلے کرنے کا ہے ، سیاسی جنگ میں پاکستان کے عوام اور اس کے مستقبل کو کسی طور بھی نظرانداز نہ کیا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button