جہلم پنڈدادنخان اور للِہ روڈ کی تعمیر کا کام التواء کا شکار، پرائیویٹ ٹھیکیدار غائب

جہلم پنڈدادنخان اور للِہ روڈ کی تعمیر کا کام التواء کا شکار، پرائیویٹ ٹھیکیدار غائب، پانچ ماہ سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے باوجود سڑک کی تعمیر شروع نہ ہو سکی، مسافر پریشان، سڑک کے ساتھ کاروبار مکمل طور پر ٹھپ ہو گئے، نکاسی آب کا نظام بری طرح متاثر، سڑک پر ہر وقت دھول مٹی کا سماں، کام کٹھائی میں ڈلنے کے باوجود انتظامیہ خاموش تماشائی بن گئی۔

تفصیلات کے مطابق جہلم پنڈدادنخان اور للِہ روڈ کی تعمیر کا کام التواء کا شکار ہو چکا ہے، ذرائع کے مطابق پرائیویٹ ٹھیکیدار معاوضہ نہ ملنے کے باعث غائب ہو چکا ہے جبکہ پانچ ماہ سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے باوجود نئی سڑک کی تعمیر شروع نہ ہو سکی جس سے مسافراور ٹرانسپورٹر حضرات سخت پریشان ہیں کیونکہ لاکھوں کی گاڑیاں تباہ و برباد ہو کر رہ گئی ہیں۔

سڑک کے ساتھ کاروبار مکمل طور پر ٹھپ ہو گئے ہیں کیونکہ مہنگائی کے دور میں بے روزگار رہنا محال ہے۔ سڑک کی تعمیر کے ساتھ پانی گرانے کا کام نہ ہو رہا جس سے ٹھیکیدار کو لاکھوں روپے کا فائدہ ہے اور عوام سانس جیسی موذی مرض میں مبتلا ہو رہی ہے۔ نکاسی آب کا نظام بْری طرح متاثر ہو چکا ہے کیونکہ موجودہ ٹھیکیدار نے پہلے سے بنی ہوئی پلیاں مٹی ڈال کر بند کر دی ہیں۔

سڑک پر ہر وقت دھول مٹی کاسماں رہتا ہے جس سے سڑک کے ساتھ بنے ہوئے ہوٹلز اور گھروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے جن کے برتنوں سے آدھا آدھا کلو مٹی برآمد ہوتی ہے۔ کام کٹھائی میں ڈلنے کے باوجود انتظامیہ خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے کیونکہ ٹھیکیدار پہلے سے بنی ہوئی سڑک صرف ختم کر کے کھنڈرات میں تبدیل کرنے میں مصروف عمل ہے۔

شہریوں نے ارباب اختیار سے مطالبہ کیا ہے کہ جس روٹین سے سڑک کا کام شروع کیا تھا اْسی روٹین سے اگر جاری رہتا تو جون تک مکمل ہو جانا تھا لیکن نہیں ہو سکا اس لئے ا ب سڑک کی تعمیر کو جلد از جلد مکمل کروا کے عوام کو حقیقی معنوں میں ریلیف فراہم کیا جائے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button