عید الفطر کے موقع پر مسافروں سے زائد کرایہ وصول پر قابو نہ پایا جا سکا

جہلم: عید الفطر کے موقع پر مسافروں سے زائد کرایہ وصول پر قابو نہ پایا جا سکا، آرٹی اے سیکرٹری سمیت قانون نافذ کرنے والے ذمہ داران غائب، مسافر زائد کرائے ادا کرنے پر مجبور، مسافرں نے نو منتخب وزیراعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق عید الفطر سے قبل ہی ضلع جہلم سے مختلف شہروں میں چلنے والی ٹرانسپورٹ کے عملے نے مسافروں سے اوورچارجنگ اور اوورلوڈنگ کا سلسلہ شروع کر دیا تھا جو تاحال تواتر کے ساتھ جاری و ساری ہے۔

قابل ِ ذکر بات یہ ہے کہ پنجا ب بھر کے تمام اضلاع میں تعینات سیکرٹری ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی باقائدہ شہریوں کی سہولت کے لئے سیل قائم کرتے ہیں اور شہریوں کی شکایات کے اذالے کے لئے بس ، ویگن اسٹینڈ میں اپنے دفتر اور موبائل فون کا اندراج کرتے ہیں تاکہ زائد کرایہ وصولی اور دوران سفر شہریوں کو پیش آنے والی مشکلات کا بروقت اذالہ کیا جا سکے۔

سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی نے مسافروں سے زائد کرائے وصولی پر کارروائیاں کرنے کی بجائے مکمل لا تعلقی اختیار کررکھی ہے، جس کی وجہ سے مقامی ٹرانسپورٹرز مسافروں سے کئی سو گنااضافی کرائے وصول کر کے پنجاب روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے مقررکردہ کرایوں کی دھجیاں بکھیر رہے ہیں۔

مسافروںکا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ مسافروں کو سہولیات مہیا کرنے کی بجائے خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہے، ٹرانسپورٹرز نے سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے ساتھ ملی بھگت کرکے شہریوں کی جیبوں کا صفایا کرنا شروع کررکھا ہے۔

ضلع جہلم سے دوسرے شہروں میں چلنے والی گاڑیوں میں نہ تو کرائے نامے آویزاں کیے گئے ہیں اور نہ ہی مقررہ مسافروں کو گاڑیوں میں سوار کیا جاتا ہے بلکہ گاڑیوں میں مسافروں کو بھیڑ بکریوں کی طرح ٹھونس دیا جاتا ہے، اگر کوئی مسافر زائد کرائے کی بابت سوال کرے تو ٹرانسپورٹ عملہ مسافروں کے ساتھ گالی گلوچ ہاتھا پائی کرنے سے بھی گریز نہیں کرتااور مسافروں کو ویران مقامات پر گاڑیوں سے اتار دیا جاتا ہے۔

مسافروں نے مطالبہ کیاہے کہ ٹرانسپورٹرز کی سرپرستی کرنے والے ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے ذمہ داران کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے تا کہ غریب، محنت کش افراد پبلک ٹرانسپورٹ پر حکومت کے مقرر کردہ کرایوں کی ادائیگی کرکے سفر جاری رکھ سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button