سول ہسپتال کھیوڑہ بدانتظامی کا شکار، لیبارٹری ٹیکنیشن مریضوں سے بدسلوکی کرنے لگا

پنڈدادنخان: سول ہسپتال کھیوڑہ بد انتظامی کا شکار، مریض خوار ہونے لگے، لیبارٹری ٹیکنیشن نے مریضوں کے ساتھ بدسلوکی سے پیش آنا وطیرہ بنا لیا، ادھیڑ عمر لیبارٹری ٹیکنیشن ٹیسٹ کروانے والوں مریضوںکو خوار کرنے لگا، موصوف لیبارٹری کی بجائے ایمرجنسی میں فرائض انجام دیتے نظر آتے ہیں،اعلیٰ حکام سے نوٹس کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق آبادی کے لحاظ سے ضلع جہلم کے دوسرے بڑے شہر کھیوڑہ کا سول انتظام بد انتظامی کا شکار ہے، مریض خوار ہونے لگے۔ دوسری جانب ہسپتال لیبارٹری کا ٹیکنیشن نے مریضوں کے ساتھ ہتک آمیز رویہ سے پیش آنا معمول بنا لیا۔

مریضوں کا کہنا ہے کہ ادھیڑ عمر لیبارٹری ٹیکنیشن ہسپتال سے ٹیسٹ کروانے والے مریضوں سے ویٹنری عملہ کی طرح برتاؤ کرتا ہے جبکہ ہسپتال میں ایمرجنسی مریضوں کے ٹریٹمنٹ کے لیےجنریٹر کی سہولت موجود ہے لیکن اس کے باوجود نہ تو لوڈشیڈنگ میں مریضوں کے ٹیسٹ کیے جاتے ہیں اور نہ ہی مناسب ادویات فراہم کی جاتی ہیں۔

نائٹ شفٹ میں ہسپتال ٹریننگ سینٹر کا منظر پیش کرتا ہے، ڈسپینسروں کی بجائے غیرتربیت یافتہ عملہ مرضوں کو چیک کرتا ہے جبکہ ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ رات کی ڈیوٹی پر موجود ڈاکٹر یا تو ہسپتال میں ہوتا ہی نہیں ہو بھی تو دروازہ بند کرکے سو رہا ہوتا ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ ہسپتال میں سہولیات موجود ہونے کے باوجود عوام سہولیات سے محروم ہیں، اعلیٰ حکام نوٹس لے کر لیبارٹری ٹیکنیشن کے خلاف محکمانہ کارروائی عمل میں لاکے کسی سنجیدہ شخص کی تعیناتی کو یقینی بنائیں اور حکومت کی جانب سے دی گئی سہولیات عوام تک پہنچائیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button