جہلم میں ٹرانسپورٹرز نے من مانے کرائے وصول کر کے مسافروں کی زندگیاں اجیران بنا دیں

0 10

جہلم: ڈسٹرکٹ ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی عدم توجہی، ٹرانسپورٹرز نے من مانے کرائے وصول کر کے مسافروں کی زندگیاں اجیران بنا دیں، آئے روز لڑائی جھگڑے معمول بن گے، بین الاضلاعی سفر کے ساتھ ساتھ مقامی چنگ چی ڈرائیورز بھی مسافروں کو لمبے ہاتھوں سے لوٹنے لگے، ڈی آرٹی اے اور ضلعی انتظامیہ کی خاموشی سوالیہ نشان بن گئی۔

تفصیلات کے مطابق سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کی عدم توجہی کی وجہ سے مسافروں کو دورانِ سفر شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑ رہا ہے، 2020 کے بعد کوئی کرایہ نامہ جاری نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے بین الاضلاعی سفر کرنے والے مسافروں سے ٹرانسپورٹرز منہ مانگے کرائے وصول کر رہے ہیں، مسافروں کی جانب سے باز پرس کرنے پر پٹرول کی قیمتوں کو جواز بنا کر زائدکرایہ وصول کیا جاتا ہے۔

جہلم سے راولپنڈی ، جبکہ راولپنڈی سے جہلم کے کرائے میں نمایاں فرق ہے، مسافر ہائی ایس جو 14 سیٹر پاس ہے اس گاڑی میں 18 سے زائد مسافروں کو بھیڑ بکریوں کی طرح ٹھونس دیا جاتا ہے۔ اس سلسلے میں سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کسی بھی قسم کی کارروائیاں کرنے سے گریزاں ہے جس کی وجہ سے ٹرانسپورٹروں نے مختلف اقسام کے کچی سڑک، پکی سڑک اور نیم پختہ سڑک کے حساب سے از خود من مانے کرائے وصول کرنے شروع کر رکھے ہیں۔

مسافروں کا کہنا ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے باوجود ابھی تک نئے کرائے نامے جاری نہیں کئے گئے جس کی وجہ سے ٹرانسپورٹرز من مانے کرائے وصول کر رہے ہیں۔

مسافروں نے چیئرمین ڈسٹرکٹ ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی / ڈپٹی کمشنر سے نوٹس لینے اور نئے کرائے نامے جاری کرنے اور گاڑیوں کے اندر نمایاں جگہ پر آویزاں کروانے کا مطالبہ کیا ہے۔

اپنی رائے دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.