سردی میں شدت کے ساتھ ہی جہلم میں ناک و گلے کے امراض میں غیر معمولی اضافہ

0 14

جہلم: موسم کی تبدیلی اور سردی میں شدت کے ساتھ ہی شہرومضافاتی علاقوں میں ناک و گلے کے امراض میں غیر معمولی اضافہ ہوگیا۔ بڑی تعداد میں شہری نزلہ، زکام، کھانسی، سر درد، ناک بند ہونے، ناک سے پانی بہنے، چھینکیں آنے، گلے میں درد وخراش، جسم میں درد اور بخار کی وجہ سے ہسپتالوں کا رخ کر رہے ہیں، یہی وجہ ہے کہ ہسپتالوں میں مریضوں کا رش بڑھ گیا ہے۔

اس پر ماہرامراض ناک ،کان وگلہ نے شہریوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تلی ہوئی، کھٹی، چکنی و ٹھنڈی چیزوں سے پرہیز کریں، ٹھنڈ ی ہواچلتے وقت گھروں سے باہر نکلتے وقت احتیاطی تدابیر اختیار کریں، بصورت دیگر یہ امراض سنگین نوعیت اختیار کر سکتے ہیں۔

ہسپتال کے شعبہ امراض ناک ،کان وگلہ کے ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ موسم کی تبدیلی کے ساتھ ہی ہسپتال میں بڑی تعداد میں گلے اور نا ک کے امراض میں مبتلا مریض آ رہے ہیں جب بھی موسم خشک یا تبدیل ہوتا ہے اسی طرح کے مریض آتے ہیں کیونکہ زیادہ تر مریض احتیاط نہیں برتتے اور ہر طرح کا ٹھنڈا اور کھٹا کھانا کھالیتے ہیں۔ٹھنڈی اورتیز ہوا ناک پر لگنے سے نزلہ زکام بخار ہو جاتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر احتیاط کی جائے اور پانی کا زیادہ استعمال کیا جائے تو یہ امراض 4 سے 5 دن میں خودبخود ٹھیک ہو جاتے ہیں۔ آج کل موسم کی تبدیلی کے باعث ناک کی الرجی کے بہت زیادہ مریض آرہے ہیں۔

جہلم شہر سمیت مضافاتی علاقوں میں ناک کی الرجی کے مریضوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے کیونکہ شہر کی سڑکوں پر گرد وغبار اور دھول مٹی بہت زیادہ ہے شہری ماسک کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں تا کہ بیماریوں سے محفوظ رہ سکیں۔

اپنی رائے دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.