نصف کلو وزنی کواڈکاپٹر ڈرون نے رفتار کا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا

0 16

ایریزونا: ڈرون اور کواڈکاپٹر عام ہونے سے اب ان کی تیز رفتاری کے مقابلے منعقد ہو رہے ہیں۔ حال ہی میں ایک ننھے منے کواڈ کاپٹر نے تیز ترین پرواز کا نیا ریکارڈ قائم کیا ہے۔

مکینکل انجنیئر اور شوقیہ ڈرون ساز ریان لیڈرمان نے ایکس ایل آر وی تھری نامی کواڈکاپٹر ڈیزائن کیا ہے اور اس کا فریم بھی بنایا ہے۔ اس کا وزن محض 490 گرام ہے جو عام کواڈکاپٹر سے تو مختلف ہے لیکن مقابلے میں شامل کرلیا گیا ہے۔ اس پر گولی کی شکل کے خول بنائے گئے ہیں جو اس کی رفتار بڑھاتے ہیں اور ڈھانچہ بھی عموداً بنایا گیا ہے۔ سب سےنیچے اس کی پنکھڑیاں ہیں۔

اس میں طاقتور بیٹری لگائی گئی ہے تاہم تبدیل شدہ چیسس، اندرونی لے آؤٹ اور ساخت ہی برق رفتاری کا راز ہے۔ اس میں کوبراموٹریں لگائی گئی ہیں۔ ریان کے مطابق اس پورا سامان 400 ڈالر میں خریدا جاسکتا ہے۔

رفتار کا ریکارڈ بنانےکےلیے یہ شرط رکھی گئی ہے کہ ڈرون ایک مقام تک پہنچایا جائے اور دوبارہ اسی راہ سے پلٹ کر اپنے پہلے والے مقام پر واپس پہنچے۔ اس کے علاوہ بلندی بدلنے کی اجازت نہیں تھی کیونکہ اس سے ثقلی قوت اثر کرتی ہے اور اس سے فائدہ اٹھایا جاسکتا ہے۔ آخری شرط یہ تھی کہ اسے کم ازکم 100 میٹر تک اڑایا جائے تاکہ اس کی رفتار کو ناپا جاسکے۔

گزشتہ نومبر کو گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کے افسران کے سامنے ریان نے ڈرون کو 360 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار پر اڑایا جبکہ اس سے قبل وہ اسی ڈرون کو 414 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے اڑاچکے تھے لیکن اسے رجسٹر نہیں کیا گیا تھا۔

گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے اب تیزرفتار ڈرون کی باقاعدہ تصدیق بھی کی ہے۔

اپنی رائے دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.